Khawb Adhoore Hote Hein by DAS


جب بوجھ انگڑائی لیتے ہیں
تو خواب ادھورے ہوتے ہیں

جب عشق کی مار پڑتی ہے
تو جذبات ادھورے ہوتے ہیں

شہرِ غربت کے اکثر باسیوں کے
نئے سہارے ادھورے ہوتے ہیں

دیوانوں کی محفل میں یارو
ساقی جام ادھورے ہوتے ہیں

کہتے ہیں محبت اندھی ہے
پر ارمان ادھورے ہوتے ہیں

یادوں کی ہلکی بارش میں
یہ لمحات ادھورے ہوتے ہیں

جھونپڑیوں میں رنگیں سپنوں کے
شہزاد بس خواب ادھورے ہوتے ہیں
(دانش احمد شہزاد)

Post a Comment

0 Comments